فرار کے دوران ہاتھیوں نے 56 ہیکٹر فصلیں تباہ کردیں


چین میں 15 ہاتھیوں نے فرار اختیار کرتے ہوئے 500 کلومیٹر سفر طے کیا اور درجنوں مقامات اور فصلوں کو برباد کیا ہے۔ فوٹو: سی این این

چین میں 15 ہاتھیوں نے فرار اختیار کرتے ہوئے 500 کلومیٹر سفر طے کیا اور درجنوں مقامات اور فصلوں کو برباد کیا ہے۔ فوٹو: سی این این

بیجنگ: ہاتھیوں کی لڑائی میں گنے کے کھیت کا نقصان تو ہوتا ہے لیکن اب چین میں قدرتی تحفظ گاہ سے فرار ہوتے ہوئے 15 ہاتھیوں نے نہ صرف 500 کلومیٹر کا سفر طے کیا بلکہ راستے میں آنے والی کئی اشیا کو روندتے ہوئے 56 ہیکٹر تیار فصلوں کو تباہ کردیا ہے۔

چین کے صوبے یونان میں ژائی شوانگبانا سے یہ ہاتھی فرار ہوئے اور 500 کلومیٹر کا سفر کرکے یوکسی شہر پہنچے جہاں 26 لاکھ افراد رہتے ہیں۔ اپنے راستے میں انہوں نے ہر شے کو تباہ و برباد کیا ہے۔ اس طویل سفر میں انہوں نے 412 جگہوں پر تباہ مچائی جس میں 56 ہیکٹر پر کھڑی فصلیں بھی برباد ہیں۔ اس پورے فساد میں ہاتھیوں نے 11 لاکھ ڈالر کا نقصان کردیا۔

یہاں تک کہ آبادیوں اور دیہاتیوں کو گھروں تک محدود رہنا پڑا۔ اس ضمن میں ایک کمانڈ سینٹر بنایا گیا اور فوری طور پر 360 رضاکاروں، 76 پولیس کار اور ٹرکوں کے علاوہ نو ڈرون کو ہوا میں اڑایا گیا۔ ہاتھیوں کا غصہ ٹھنڈا کرنے کے لیے 18 ٹن کھانا بھی مہیا کیا گیا تھا۔ لیکن اس سارے واقعے میں کسی جان نقصان کی اطلاع نہیں ملی ہے۔

ہاتھیوں کے قافلے میں چھ مادائیں، چھ نر، تین نوعمر اور تین بچہ ہاتھی شامل تھے۔ تاہم اب تک ہاتھیوں کے فرار کی وجہ سامنے نہیں آسکی۔ ماہرین کا اصرار ہے کہ یہ واقعہ وائلڈ لائف انتظامیہ کی ٖغفلت سے پیش آیا ہے۔ دوسری جانب مختصر وقفے میں اتنے طویل فاصلہ طے کرنے کا یہ پہلا واقعہ ریکارڈ کیا گیا ہے جس میں فرار ایشیائی ہاتھی دوڑتے ہوئے اب شہر تک پہنچ چکے ہیں۔





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *